PAK NEWS

پاکستانیوں کی آواز

National قومی خبریں

ایئر مارشل ارشد ملک کو بطور سی ای او پی آئی اے کام جاری رکھنے کی سپریم کورٹ سے اجازت مل گئی۔

سپریم کورٹ کے ارشد ملک کو بطور سربراہ پی آئی اے کام جاری رکھنے کی اجازت دے دی۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر پی آئی اے کا بزنس پلان طلب کرلیا۔ چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں ہے تین رکنی بینچ نے سماعت کی۔ سپریم کورٹ نے ایئر مارشل ارشد ملک کو ایک ماہ تک کام جاری رکھنے کی اجازت دے دی ہے چیف جسٹس نے سخت ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ جو چیزیں پی آئی اے کو نیچے دھکیل رہی ہیں اس میں بھرتی کی گئی افرادی قوت ہے جو پی آئی اے میں جہازوں کے تناسب سے زیادہ لوگ کام کر رہے ہیں یہی وجہ ہے کے پی آئی اے منافع بخش ادارہ نہیں بن سکتا۔

کرونا وائرس کے حوالے سے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کرونا وائرس بارڈر اورآئر رپورٹس کے ذریعے ملک میں آیا اس وائرس کے تدارک کے لیے اداروں میں بیٹھے لوگوں نے کیا کیا کسی کو کوئی پرواہ ہی نہیں چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ہر برا کام ایئرپورٹس پر جاری ہے ایئرپورٹ پر کسٹم ایف آئی اے سمیت تمام ادارے مافیا ہیں۔

۔ عدالت نے آپ نے حکم میں کہا ہے کہ اٹارنی جنرل نے بتایا کہ پی آئی اے کا ادارہ وینٹیلیٹر پر ہے۔ ارشد ملک کو کام کرنے دیا جائے وہ قابل آدمی ہیں اور نتائج دیں گے کیس کی سماعت ایک ماہ کے لئے ملتوی کردی گئی۔۔