منی لانڈرنگ کے کیس میں پیشی کے موقع پر مسلم لیگ نون کے صدر اور سابق وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف نے عدالت کو بیان دیتے ہوئے کہا کہ میں ایک شکایت کرنا چاہتا ہوں کہزندگی موت اللہ کے ہاتھ میں ہے لیکن دو دن مجھے ذہنی اذیت دی گئی ۔ مجھے نماز پڑھنے کے لئے کرسی نہیں دی گئی میری کمر کا مسئلہ ہے لیکن جان بوجھ تنگ کیا گیا۔ مجھے کرسی خود اٹھا کر لانی پڑتی ہے۔ انہوں نے نے عدالتی بیان میں کہا کہ یہ سب انتقامی حرکتیں جو عمران نیازی اور شہزاد اکبر پر کے کہنے پر نیب کر رہی ہے کھانا جان بوجھ کر زمین پر رکھا جاتا ہے تاکہ مجھے جکھ کراٹھانا پڑے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق شہباز شریف نے مزید کہا کہ میری کمر کو کچھ ہوا یا جان گئی تو ایف آئی آر عمران خان اور معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر کے خلاف درج کر آؤں گا۔

sabehakhanam