‏انسانی جسم میں پہلی بار خنزیر کے دل کی کامیاب پیوند کاری۔

یونیورسٹی آف میری لینڈ کے میڈیکل سکول نے پیر کو ایک بیان میں کہا کہ یہ ’تاریخی‘ سرجری گذشتہ جمعے کو ہوئی۔
ڈاکٹروں کے مطابق اگرچہ مریض کی حالت ابھی نہیں سنبھل سکی ہے، لیکن یہ جانوروں سے انسانوں میں پیوند کاری کے لیے ایک اہم سنگ میل ہے۔
مریض 57 سالہ ڈیوڈ بینیٹ کو انسانی دل کی پیوند کاری کے قابل نہیں سمجھا گیا تھا۔ یہ فیصلہ اکثر اس وقت کیا جاتا ہے جب وصول کنندہ کی بنیادی صحت بہت خراب ہوتی ہے۔
برطانوی میڈیا دی انڈپینڈنٹ کے مطابق میری لینڈ سے تعلق رکھنے والے ڈیوڈ بینیٹ اس سرجری سے بحفاظت صحت یاب ہو رہے ہیں اور ڈاکٹر ان کی حالت پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔
مریض نے سرجری سے ایک دن پہلے کہا تھا’یہ مرنے یا اس ٹرانسپلانٹ کے درمیان کا انتخاب تھا۔ میں جینا چاہتا ہوں، میں جانتا ہوں کہ یہ اندھیرے میں ایک گولی چلانے کی طرح ہے، لیکن یہ میری خواہش ہے۔‘
مسٹر بینیٹ، جنہوں نے گذشتہ کئی ماہ بائی پاس مشین پر بستر پر گزارے ہیں، نے مزید کہا: ’میں صحت یاب ہونے کے بعد بستر سے اٹھنے کا منتظر ہوں۔‘
امریکہ میں طبی ریگولیٹر فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے) نے نئے سال کے موقع پر سرجری کے لیے ہنگامی اجازت دی تھی۔
طبی مرکز میں کارڈیک ٹرانسپلانٹ پروگرام کے ڈائریکٹر ڈاکٹر بارٹلی گریفتھ نے اخبار ’نیو یارک ٹائمز‘ کو بتایا:’یہ کام کر رہا ہے اور یہ عام لگتا ہے۔ ہم پرجوش ہیں، لیکن ہم نہیں جانتے کہ آنے والا کل ہمارے لیے کیا لائے گا۔ ایسا پہلے کبھی نہیں کیا گیا تھا۔‘

ویڈیوں اور تحریر بشکریہ اردو انڈیپیڈینٹ
SHARE NOW

Leave a Reply

Your email address will not be published.